منظر فضائے دہر میں سارا علی کا ہے – پیر نصیر الدین نصیر

منظر فضائے دہر میں سارا علی کا ہےجس سمت دیکھتا ہوں نظارہ علی کا ہے مرحب دو نیم ہے سر خیبر پڑا ہوااٹھنے کا اب نہیں کہ یہ مارا علی کا ہے کُل کا جمال جزو کے چہرے سے ہے عیاںگھوڑے پہ ہیں حسین نظارہ علی کا ہے اصحابی کالنجوم کا ارشاد بھی بجاسب سے مگر بلند ستارا علی کا ہے ہم فقر مست چاہنے والے علی کے ہیںدل پر ہمارے صرف اجارا علی کا ہےِ اہلِ ہوس کی لقمہ تر پر رہی نظرنان جویں پہ صرف گزارا علی کا ہے تم دخل دے رہے ہو عقیدت کے باب میںدیکھو … Continue reading منظر فضائے دہر میں سارا علی کا ہے – پیر نصیر الدین نصیر

علامہ اقبال کی ایک نایاب غزل

شاعر مشرق علامہ اقبال کی ایک نایاب غزل جو باقیات اقبال میں شامل ہے ۔ عاشقِ دیدار محشر کا تمنّائی ہواوہ سمجھتے ہیں کہ جرمِ ناشکیبائی ہوا غیر سے غافل ہوا میں اے نمودِ حسنِ یارعرصۂ محشر میں پیدا کنجِ تنہائی ہوا میری بینائی ہی شاید مانعِ دیدار تھیبند جب آنکھیں ہوئیں تیرا تماشائی ہوا ہائے میری بد نصیبی ، وائے ناکامی مریپاؤں جب ٹوٹے تو شوقِ دشتِ پیمائی ہوا میں تو اس عاشق کے ذوقِ جستجو پر مرمٹا’’ماعرفنا‘‘ کہہ کے جو تیرا تمنائی ہوا تجھ میں کیا اے عشق وہ انداز معشوقانہ تھاحسن خود ’’لولاک‘‘ کہہ کے تیرا شیدائی … Continue reading علامہ اقبال کی ایک نایاب غزل

صَلُّوْا عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ

صَلُّوْا عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ تری شان ذکر کروں تو کیاتجھے حق نے ایسا بنا دیا!کہ ترے لیے سرِ دوسرانہ مثیل ہے نہ مثال ہیصَلُّوْا عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ سرِ لامکاں جو فراز تھاترے پائوں نے اُسے چُھو لیانہ گزر جہاں مرے وہم کاجسے پا سکے نہ خیال ہیصَلُّوْا عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ سرِ حشر اک ترا آسرانہ مری فغاں میں دمِ رسانہ کمال و فیض لبِ دعانہ مرے عمل کا مآل ہیصَلُّوْا عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ کبھی آئی کوئی کٹھن گھڑیترے دیں کو جب بھی طلب ہوئیسرِ نوکِ نیزہ گواہی دیتری آلؑ ہے تری آلؑ ہیصَلُّوْا عَلَیْہِ وَاٰلِہ کلام- ثاقب اکبر Continue reading صَلُّوْا عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ

رسول اکرم اور اہلبیت کو افتخار عارف کا نذرانہ عقیدت

رسول اکرم صلی الله علیہ والہ وسلم اور ان کے اہلبیت علیہم السلام کو افتخار عارف کا نذرانہ عقیدت آپ بھی سماعت کیجیے اور فیضان محمد وآل محمد علیہم السلام سے بہرہ مند ہوں – اہلبیت و آل محمد سے محبت ہمارا جزو ایمان ہے اور ہر فرقے اور مسلک کے مسلمانوں میں مشترک ہے – فروعی اور فرقہ وارانہ اختلافات میں پڑ کر اپنے مقدس مشترکات کو فراموش نہ کریںتعارف – میان خالق و مخلوق خط نور احمد Continue reading رسول اکرم اور اہلبیت کو افتخار عارف کا نذرانہ عقیدت

ہم سندھی لوگ، ہم صوفی لوگ ہیں

سندھ کی بیٹی کی خوبصورت نظم اردو ترجمہ ہم سندھی لوگ، ہم صوفی لوگ ہیں امن امان چاہتے ہیں نہ جھگڑے نہ جنگیں نہ شیطان کو چاہتے ہیں ہم سندھی لوگ، ہم صوفی لوگ* ہمارا دین اور مذہب ہر انسان سے محبت ہے ہم سچل جیسا صوفی ، سچا انسان چاھتے ہیں ہم سندھی لوگ ، ہم صوفی لوگ ہیں ……..*نہ ہندو نہ مومن نہ کوئی ذات ہے میری میں جو ہوں سو ہوں، بس تیرا احسان چاہتا ہوںہم سندھی لوگ، ہم صوفی لوگ ہیں امن امان چاہتے ہیں نہ جھگڑے, نہ جنگیں نہ شیطان کو چاہتے ہیں —- حسن … Continue reading ہم سندھی لوگ، ہم صوفی لوگ ہیں

اور قافلہ سالار حُسین ابن ِ علی ہے – نوابزادہ نصراللہ خان

پھر شور ِ سلاسل میں سرودِ ازلی ہےپھر پیش ِنظر سُنّتِ سجاّدِ ولی ہے اک برق ِ بلا کوند گئی سارے چمن پرتُو خوش کہ مری شاخ ِ نشیمن تو جلی ہے غارت گرئ اہل ستم بھی کوئی دیکھےگلشن میں کوئی پھول، نہ غنچہ نہ کلی ہے ہم راھرو ِ دشتِ بلا روز ِ ازل سےاور قافلہ سالار حُسین ابن ِ علی ہے Continue reading اور قافلہ سالار حُسین ابن ِ علی ہے – نوابزادہ نصراللہ خان

غالب اور میر کا کلام، ڈاکٹر این میری شمل اور افغان سائنسدان کا انڈین دوست سید حسین

ثقلین امام بی بی سی اردو سروس، لندن31 دسمبر 2019 افغان سائنسدان امریکہ میں ایسے چاول تیار کرتا ہے جو اُسے کروڑپتی بنا دیتے ہیں اور وہ اپنی دولت کا نصف حصہ میر تقی میر اور مرزا غالب کی شاعری کے انگریزی میں ترجمے کے لیے عطیہ کر دیتا ہے اور یہ کام جرمن مستشرق ڈاکٹر این میری شمل مکمل کرتی ہیں۔کیس ویسٹرن یونیورسٹی کے ایک محقق جان کے بیڈن افغانستان اور امریکہ کے درمیان تعلقات کی تاریخ‘ پر اپنے تحقیقی مقالے میں بتاتے ہیں کہ یہ افغان سائنسدان، عطااللہ اوزئی۔درانی، ایک طالب علم کی حیثیت میں سنہ 1923 میں … Continue reading غالب اور میر کا کلام، ڈاکٹر این میری شمل اور افغان سائنسدان کا انڈین دوست سید حسین

نعت – خدا کا ذکر کرے

Beautiful naat – Khuda ka zikr karay, zikre Mustafa (SAWW) na karay. – Hameed Rizviنعت رسول مقبول – خدا کا ذکر کرے ذکر مصطفی نہ کرے – صَلَّىٰ ٱللَّٰهُ عَلَيْهِ وَآلِهِ وَسَلَّمَنعت خواں – حمید رضوی خدا کا ذکر کرے ذکرِ مصطفیٰ نہ کرےہمارے منہ میں ہو ایسی زباں خدا نہ کرے درِ رسول پہ ایسا کبھی نہیں دیکھاکویٌ سوال کرے اور وہ عطا نہ کرے کہا خدا نے شفاعت کی بات محشر میںمرا حبیب کرے کویٔ دوسرا نہ کرے مدینے جا کے نکلنا نہ شہر سے باہرخدانخواستہ یہ زندگی وفا نہ کرے اسیر جس کو بنا کر رکھیں مدینے … Continue reading نعت – خدا کا ذکر کرے

وقت ہے آخری – شکیل بدایونی کی غزل جس کو روشن بابا نے امر کر دیا

وقت ہے آخری – شکیل بدایونی کی غزل جس کو درگاہ سید سالار مسعود غازی، بہرائچ کے مقام پر روشن بابا نے ڈوب کر گایا اور ہمیشہ کے لیے امر کر دیا – بہرائچ بھارت کے صوبہ اتر پردیش کا ایک تاریخی شہر ہے جو لکھنؤ کے 125 کلومیٹر شمال مشرق میں ہے- روشن بابا کا انتقال آج سے چند سال قبل ہوا – اس ویڈیو کو یو ٹیوب پر عبید الله نے صوفی بہرائچ کے نام سے دسمبر ٢٠١١ میں پوسٹ کیا – This heart touching Ghazal, written by Shakeel Badayuni, has been sung by Roshan Baba (late). Roshan … Continue reading وقت ہے آخری – شکیل بدایونی کی غزل جس کو روشن بابا نے امر کر دیا