کیا ایرانی یا فارسی النسل لوگ اسلام سے نسلی تعصب رکھتے ہیں؟

بعض متعصب فرقہ پرست خوارج کہتے ہیں کہ ایرانیوں کو اوائل اسلام میں عربوں کی ایران پرفتح کے دن سے آج تک اسلام سے بغض ہے ۔ ان کے لیے عرض ہے کہ اہلسنت کے تقریباً تمام اکابر محدثین بشمول امام بخاری، امام مسلم، ابن ماجہ،نسائی، ترمذی، ابو داؤد اور دیگر ایرانی یا فارسی تھے ۔ آج کے تکفیری خوارج صرف فرقہ پرستی کی وجہ سے ایرانی یا فارسی بولنے والے اہل اسلام کو مجوسی سازشی اور مشرک کہتے ہیں ۔

ترکی میں عثمانیوں اور ایران میں صفیوں کی حکومت کے ادوار میں ذاتی یا خاندانی آمریت کے فروغ کے لیے فرقہ واریت کی آگ بھڑکائی گئی ۔ اسی طرح آج سعودی عرب وہابیت اور ایران ولایت فقیہ کے فروغ کے لیے ایک دوسرے سے دست بگریباں ہیں لیکن اصل مقصد صاحبان اقتدار کی حکومت کا تسلسل ہے۔ در حقیقت ان میں سے کوئی بھی ملک اہلسنت یا اہل تشیع کی نمائندگی نہیں کرتا۔

خدا کے لیے آج کے دوریا گزشتہ ادوار کی سیاسی مخالفتوں اور تنازعات میں اپنا فرقہ واریت کا چورن مت ملائیں ۔ تمام اہل اسلام سے محبت اور احترام سے پیش آئیں اور تکفیری نفرت انگیزی سے دور رہیں۔

Diversity

Imam Muslim : Iranian
Al Bukhari : Uzbeki/Persian
Ibn Majah: Iranian /Persian
Al Nasā’ī : Turkmenistan /Persian
Al Tirmidhi : Uzbeki /Persian
Abu Dawood : Iranian /Persian

Many of the above collectors of the Hadith were Persian or Iranian in origin