تکفیری انتہاپسندوں کی جانب سے خانہ کعبہ کا محاصرہ: 38 سال پہلے کیا ہوا تھا

عابد حسین بی بی سی اردو ڈاٹ کام، اسلام آباد سعودی عرب کے ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان نے حال ہی میں امریکی اخبار نیو یارک ٹائمز کو دیے گئے انٹرویو میں کہا کہ ‘ہم ملک میں اسلام کو اس کی اصل شکل میں واپس لے جانا چاہتے ہیں اور سعودی معاشرے کو ویسا بنانا چاہتے ہیں جیسا وہ 1979 سے پہلے تھا۔’ اس حوالے سے کئی لوگوں کے ذہن میں یہ سوال اٹھا کہ 1979 میں ایسا کیا ہوا تھا جس نے سعودی معاشرے کی شکل تبدیل کر دی تھی؟ 1979 کو ویسے تاریخ میں اور واقعات کی … Continue reading تکفیری انتہاپسندوں کی جانب سے خانہ کعبہ کا محاصرہ: 38 سال پہلے کیا ہوا تھا

سنی شیعہ فسادات کرنے کی سازش پاک فوج نے بے نقاب کر دی

سانحہ راجہ بازار راولپنڈی – ٢٠١٣ عاشورہ کے موقع پر سنی شیعہ فسادات کرنے کی سازش پاک فوج نے بے نقاب کر دیتکفیری خوارج نے کالے کپڑے پہن کر اپنے ہی دیوبندی مسلک کی مسجد پر حملہ کیا تاکہ ملک میں فرقہ وارانہ فسادات شروع ہوں ڈی جی آئی ایس پی آر آصف غفور کی گفتگو ضرور سنیں- مجرموں کی زبانی ان کا اقبال جرم Continue reading سنی شیعہ فسادات کرنے کی سازش پاک فوج نے بے نقاب کر دی

ایں چہ بوالعجبی است – تحریر: سید زید زمان حامد

کیا اس شخص سے زیادہ کوئی بدنصیب اور ظالم ہوسکتا ہے کہ سیدی رسول اللہﷺ ہجرت فرمانا چاہیں اور وہ سیدیﷺ کی راہ میں رکاوٹیں ڈالے، اور لوگوں کو سیدیﷺ کے ساتھ ہجرت سے روکے اور یہ کہے کہ مشرکوں اور مسلمانوں کو مکے میں ہی اکٹھے رہنا چاہیے؟کیا اس شخص سے زیادہ کوئی بدنصیب، گستاخ اور کافر ہوسکتا ہے کہ جو غزوئہ بدر کے موقع پر ابوجہل کے ساتھ کھڑا ہو اور سیدی رسول اللہﷺ کے لشکر اور مدینہ منورہ کی ریاست کے خلاف جنگ کرے؟ اب ذرا دل تھام کر سنیں۔۔۔ اوپر بیان کردہ دونوں ظلم عظیم اور … Continue reading ایں چہ بوالعجبی است – تحریر: سید زید زمان حامد

دیوبندیت اور مغالطے – ڈاکٹرطفیل ہاشمی

درجنوں پوسٹس میں اس امر کا اظہار کیا گیا کہ ملک میں دہشت گردی کے واقعات کی ذمہ داری ان دیوبندی مدارس پر ہے جو دہشت گردوں کی پنیری تیار کرتے ہیں.اس حوالے سے میں یہ بات واضح کرنا چاہتا ہوں کہ اگرچہ ایسے افراد اور ادارے خود کو دیوبندیت کی طرف منسوب کرتے ہیں اور دیوبندیت ان کی گھر کی لونڈی ہے، اس لیے ان سے یہ انتساب کوئی چھین نہیں سکتا۔ لیکن میرا گھرانا دیوبند کا تعلیم یافتہ تھا، حتی کہ ہمارے بچپن میں ہمارے گھروں میں اکابر دیوبند کا اس طرح تذکرہ ہوتا کہ ہم بچے اپنے … Continue reading دیوبندیت اور مغالطے – ڈاکٹرطفیل ہاشمی

یوم شہداء کی مناسبت سے شیعہ شہیدوں کا تذکرہ ۔۔حمزہ ابراہیم

پاکستان میں کل 6 ستمبر کو یوم شہداء منایا گیا۔ شہیدوں کی یاد منانا اس لیے ضروری ہے کیوں کہ تاریخ انسانی معاشرے کا حافظہ ہوتی ہے۔ اگر معاشرہ تاریخ کو بھلا دے تو تاریخ اپنے آپ کو دہرا سکتی ہے۔ دنیا بھر میں شہیدوں کی یاد منانے کیلئے نہ صرف تقریبات اور یوم مناۓ جاتے ہیں بلکہ ان شہیدوں کے آثار کو عجائب گھروں میں رکھا جاتا ہے تاکہ نئی نسل ان اسباب سے آگاہ ہو سکے جنہوں نے ان شہیدوں سے ان کی زندگی چھین لی، اور یہ سبق حاصل کر سکے کہ ان شہیدوں پر ہونے والے … Continue reading یوم شہداء کی مناسبت سے شیعہ شہیدوں کا تذکرہ ۔۔حمزہ ابراہیم

داعش، اوریا مقبول جان اور نیم خواندہ نوجوان ۔حمزہ ابراہیم

اپریل 2017 میں لیاقت میڈیکل یونیورسٹی کی طالبہ اور ایک اعلی تعلیم یافتہ گھرانے سے تعلق رکھنے والی لڑکی کی لاہور سے گرفتاری کی خبر نے پورے ملک کو ورطۂ حیرت میں ڈال دیا ۔نورین نامی اس سادہ لڑکی نے اپنی تعلیم ادھوری چھوڑ کر ایک دہشتگرد سے شادی کر لی اور گھر والوں کو یہ پیغام بھیجا کہ وہ شام جا چکی ہے۔وہ اپنے نئے نویلے دولہا کے ساتھ بقیہ زندگی گزارنے کی بجائے لاہور میں مسیحی حضرات کی مذہبی تقریب میں دھماکہ کرنا چاہ رہی تھی کہ خفیہ اداروں کے آپریشن میں گرفتار ہو گئی۔ ایسا کیوں ہوا؟ … Continue reading داعش، اوریا مقبول جان اور نیم خواندہ نوجوان ۔حمزہ ابراہیم

پاکستانی معاشرے میں شدت پسندی و عدم برداشت کی تاریخ، وجوہات اور ان کا تدارک۔حمزہ ابراہیم

اکثر یہ سمجھا جاتا ہے کہ موجودہ زمانہ برصغیر میں مذہبی تشدد کے لحاظ سے بدترین ہے۔ساٹھ اور ستر کی دہائی میں کراچی کے کلفٹن جیسے علاقوں میں کچھ لوگوں کی شراب نوشی کی تصویریں دیکھ کر یہ سمجھا جاتا ہے کہ ماضی میں پورا پاکستان ایسا تھا۔ اگرچہ کلاشنکوف اور بم کے عام ہو جانے سے شیعہ کشی کی وارداتیں بہت بڑھی ہیں، لیکن شیعہ اور سنی عوام میں تناؤ کے لحاظ سے عروج کا زمانہ پچھلی صدی کا پہلا نصف حصہ تھا۔ اس کے بعد سے یہ تعلقات بہتری کی طرف مائل ہیں۔تاریخی عمل سست ہوتا ہے اسلئے … Continue reading پاکستانی معاشرے میں شدت پسندی و عدم برداشت کی تاریخ، وجوہات اور ان کا تدارک۔حمزہ ابراہیم

مجدد الف ثانی اور شاہ ولی الله : حقائق کیا ہیں؟ (ڈاکٹر مبارک علی) ۔حمزہ ابراہیم

سنہ 1857ء کے بعد ہندوستان کے مسلمان معاشرے میں علماء کے اثر و رسوخ کو بڑھانے کیلئے یہ بھی ضروری تھا کہ تاریخ میں ان کے مثبت کردار کو ابھارا جائے اور یہ ثابت کیا جائے کہ تاریخ میں علماء نے ہمیشہ شاندار خدمات انجام دی ہیں۔ اس قسم کی تاریخ لکھنے کا کام بھی علماء نے کیا اور یہ تاریخ عقیدت سے بھرپور جذبات کے ساتھ لکھی گئی کہ جس کو لکھتے وقت تاریخی واقعات کی تحقیق یا تجزیے کی ضرورت کو اہمیت نہیں دی گئی۔ بلکہ یہ کوشش کی گئی کہ علماء کی قربانیوں سے ان کے کردار … Continue reading مجدد الف ثانی اور شاہ ولی الله : حقائق کیا ہیں؟ (ڈاکٹر مبارک علی) ۔حمزہ ابراہیم

حاجی امداد الله مہاجر مکی – بانی دیوبند

حاجی امداد الله مہاجر مکی کا شمار برصغیر پاک و ہند میں اہلسنت مسلمانوں، خاص طور پر دیوبندی مسلک کے اکابرین میں ہوتا ہے – بعض علما کے تکفیرینظریات کے برعکس حاجی امداد الله مکی اپنے نظریات اور افکار میں انتہائی اعتدال پسند اور محبت کرنے والے عالم دین تھے – حاجی صاحب مسلک کے اعتبار سے اہلسنت حنفی تھے اور مشرب کے لحاظ سے صوفی تھے – حاجی صاحب کی پیدائش 1818ء اور وفات 1899ء میں ہوئی آپ نانوتہ ضلع سہارن پور، تھانہ بھون (اتر پردیش ) بھارت میں‌ پیداہوئے ۔ سات برس کی عمر میں یتیم ہوگئے ۔ … Continue reading حاجی امداد الله مہاجر مکی – بانی دیوبند

Syria’s Grand Mufti discusses Peaceful coexistence, non-sectarian and Inclusive Syria with Eva Bartlett

DAMASCUS, SYRIA — On October 2, 2018, I met with the Grand Mufti of Syria, Dr. Ahmad Badr Al-Din Hassoun, a scholar and the highest official of Islamic law in Syria, who assumed the position of grand mufti in 2005. Dr. Hassoun’s (archived) website notes that in addition to his title of grand mufti, his other positions include, “Chairman of the Media Committee of the Higher Consultative Council for the Rapprochement between the Islamic Schools of Thought, Islamic Educational, Scientific and Cultural Organization.” Essentially meaning that the mufti focuses on interfaith, and inter-sect, dialogue. His speeches routinely focus on the theme of rapprochement … Continue reading Syria’s Grand Mufti discusses Peaceful coexistence, non-sectarian and Inclusive Syria with Eva Bartlett